تنہائی نے شدید کرب میں مبتلا کیے رکھا،
فلمی دنیا چھوڑنے کا فیصلہ کر لیا تھا کہ اپنوں نے سنبھال لیا،اداکارہ کیرا نائیٹلی


لاس اینجلس (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 دسمبر2018ء) ہالی وڈ اداکارہ کیرا نائیٹلی نے کہا ہے کہ ان کو 22 سال کی عمر میں اپنے کیریئر کے عروج پر شدید ذہنی دبائو کی وجہ سے’’ منٹل بریک ڈائون ‘‘کا سامنا ہوا اور انھوں نے فلمی دنیا کو خیر آباد کہنے کا فیصلہ کر لیا تھا۔فلم ’’پائیریٹرس آف کیرابینز‘‘،’’بینڈ اٹ لائیک بکھم‘‘اور’’پرائیڈ اینڈ پریجوڈس‘‘سے عالمی شہرت حاصل کرنے والی 33سالہ کیرا نے اپنے کیریئر کا آغاز 17سال کی عمر سے کیا اور 24 سال کی عمر میں ہالی وڈ میں اعلی معاوضہ لینے والی دوسری بڑے ایکٹریس بن گئی۔

کیرا نے اپنے ایک تازہ انٹرویو میں کہا کہ انھوں نے اپنے کیرئیر کے عروج پر پہنچ کر اسے چھوڑنے کا فیصلہ کیا تھا اور اس کی وجہ اس کی دماغی صحت تھی۔انھوں نے کہاکہ وہ ایک سال تک ہالی وڈ سے دور رہیں اور اپنے خاندان اور دوستوں کی محبتوں سے ذہنی و نفسیاتی بیماری’’پی ٹی ایس ڈی‘‘ (پوسٹ ٹرامک سٹریس ڈس آرڈر)کو شکست دینے میں کامیاب رہیں۔انھوں نے کہاکہ وہ ایک سال میری زندگی کا تاریک دور تھا یوں معلوم ہوتا تھا کہ جیسے یہ دور کبھی ختم نہیں ہو گا،میری تنہائی نے مجھے شدید کرب میں مبتلا کیئے رکھا ۔کیرا نے کہا کہ میں خوش قسمت ہوں کہ میرے پاس میرے برے وقتوں میں مجھے سہارا دینے والے موجود ہیں اگر یہ نہ ہوتے تو آج میری کہانی بالکل مختلف ہوتی۔
خبر کا مکمل متن پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے
اُردو پوائنٹ شوبز کا مرکزی صفحہ