اُردو پوائنٹ پکوان

کیلے کا جوس


اپوزیشن اور عوامی حلقوں کی شدید تنقید کے باجود حدود آرڈیننس، جسے حقوق نسواں بل کا نام دیا گیا ہے سینٹ‌اور قومی اسمبلی سے منظوری حاصل کر چکا ہے، استعفوں کے معاملے پر اپوزیشن میں پھوٹ پڑ چکی ہے، ایم ایم اے کے اراکین بھی ابھی تک غیر یقینی صورتحال کا شکار ہیں۔ آپ حدود آرڈیننس میں کی جانے والی تبدیلیوں اور اپوزیشن کے رویے پر کیا رائے رکھتے ہیں؟ اپوزیشن اور عوامی حلقوں کی شدید تنقید کے باجود حدود آرڈیننس، جسے حقوق نسواں بل کا نام دیا گیا ہے سینٹ‌اور قومی اسمبلی سے منظوری حاصل کر چکا ہے، استعفوں کے معاملے پر اپوزیشن میں پھوٹ پڑ چکی ہے، ایم ایم اے کے اراکین بھی ابھی تک غیر یقینی صورتحال کا شکار ہیں۔ آپ حدود آرڈیننس میں کی جانے والی تبدیلیوں اور اپوزیشن کے رویے پر کیا رائے رکھتے ہیں؟
ترکیب کا مکمل متن پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے
اُردو پوائنٹ پکوان کا مرکزی صفحہ